https://youtu.be/Jj85-A5Fnzw

ایک ایسا پھول جو صرف اذان کی آواز پر کھل اٹھتا ہے—یقین نہیں تو خو ددیکھ لیں

آذربائیجان میں ایک شہری کے باغیچے میں ایک ایسا پھول ہے جو صرف اذان کی آواز پر کِھلتا ہے اور پھر بند ہو جاتا ہے -یہ اللہ کی قدرت ہے کے وہ پھول دن میں پانچ بار اذان کی آواز سننے پر کھل اٹھتا ہے – امریکہ کی میڈیا ٹیم نے اس بات کی تحقیق کرنے کے لئے دن کے مختلف اوقات میں مختلف اذانوں کے وقت اس پھول کی ویڈیو بنائی اور اپنی آنکھوں سے اسے صرف اذان کی آواز پر کِھلتے اور پھر بند ہوتے دیکھا-
یہ پھول اللہ کی قدرت کا ایک شاہکار ہے۔ یوں تو اس بات کا یقین کرنا ممکن نہیں تاہم اپنی آنکھوں سے خود دیکھنے کے بعد آپ بھی اس حقیقت سے منہ نہیں موڑ پائیں گے۔

یہ پھول روزانہ پانچ بار کھل کر اللہ کی کبریائی بیان کرتا ہے۔ اس بات کی تحقیق امریکہ کے ٹی وی چینل سی این این نے بھی کر دی ہے۔
اذان کی مسحور کن آواز ہر سننے والے کے کانوں میں رس گھول دیتی ہے۔ اسی طرح مؤذن کے بلاوے پر آذر بائیجان کے ایک رہائشی کے باغیچہ میں ایک ایسا پودا ہے جس پر لگا ہر پھولیوں کھل جاتا ہے جیسے لبیک یا ا للہ کہہ رہا ہو۔
یہ پودا در اصل خالق کی ایک ایسی تخلیق ہے جو اس پاک ذات کی کبریائی کا ثبوت دیتی ہے۔
جیسا کہ اذان کے الفاظ ہیں ‘ اللہ اکبر، اللہ اکبر’، یعنی اللہ سب سے بڑا ہے۔ اس کے ساتھ ہی اذان میں اللہ کی واحدانیت اور حضرت محمد مصطفٰیﷺ کے اللہ کے نبی ہونے کا اعلان بھی کیا جاتا ہے۔ مزید یہ کہ اذان ایک بلاوا ہے فلاح و کامیابی کی طرف۔ یہ مسلمانوں سے تقاضا کرتی ہے کہ وہ اللہ کے حضور سر بسجود ہو کر اپنی حاضری لگوائیں ۔ جیسا کہ سکول اور دفاتر میں ہر روز حاضری لگوانا ضروری ہوتا ہے جس کا ریکارڈ بھی رکھا جاتا ہے- اور ایک دن کی چھٹی کرنے سے کسی فرد کی کار کردگی پر برا اثر پڑتا ہے اور اسی بنا پر اسے سالانہ یا ماہا نہ وظائف دئیے جاتے ہیں یا کٹوتی کی جاتی ہے ۔
اذان کی صورت میں نماز کے لئے بلاو ےپر بھی حاٖضر ہونے یا نہ ہونے پر کچھ ایسا ہی ہو گا۔ ٍ جو شخص پانچ بار خلوص ِنیت سے رب کے حضور حاضری لگوا جائے گا وہ آخرت میں بہترین اجر پائے گا اور جو ایسا نہ کرسکا وہ سزا کا مستحق ہو گا۔
یہ زر د رنگ کا پھول بھی شاید اذان ہونے پر حاضری لگوانے کی خاطر کھل اٹھتا ہے جو کہ اللہ تعالیٰ کی حیران کن اور خوب صورت کاری گری ہے۔ اگر آپ کو یقین نہین آتا تو خود آذر بیئجان جا کر اس پھول کا مشاہدہ کر لیں یا پھر اس سے متعلقہ ویڈیو دیکھ کر شاید آپ کو اس حقیقت پر جلدی یقین آجائے۔