فیس بک یوزرز محتاط ہو جائیں—ہیکرز نے 5 کروڑ اکاؤنٹس ہیک کر لئے

فیس بک یوزرز محتاط ہو جائیں—ہیکرز نے 5 کروڑ اکاؤنٹس ہیک کر لئے

فیس بک کے 5 کروڑ صارفین کے اکاؤنٹس ہیک کر لئے گئے ہیں۔ حال ہی میں سیلیکون ویلی ٹیک نامی ادارے نے اس بات کی تحقیق کی ہےکہ کسی نامعلوم ہیکر نے پانچ کروڑ فیس بک صارفین کے اکاؤنٹس کو ہیک کر لیا ہے۔ اس کا مطلب یہ ہے کہ وہ ایک نامعلوم شخص یا ادارہ پانچ کروڑ لوگوں کے فیس بک اکاؤنٹس تک آسانی سے رسائی حاصل کر سکے گا جس سے لوگوں کی ذاتی زندگی اور نجی معاملات متاثر ہونے کا شدید خطرہ پیدا ہو گیا ہے۔ فیس بک اکاؤنٹ پر کئی لوگوں نے پرائیویسی لگائی ہوتی ہے جس کا بنیادی مقصد یہ ہے کہ اجنبی یا غیر معلوم افراد آپ کی ذات زندگی میں مداخلت نہ کر سکیں۔ لیکن بعض شر پسند عناصر اور شرارتی افراد ہیکنگ کے نت نئے طریقے ڈھونڈ کر کسی نہ کسی طر ح لوگوں کی پرائیویسی حرام کرنے کے درپے ہوتے ہیں ۔ایسا ہی کچھ حال ہی میں ہوا ہے۔
یہ بھی ممکن ہے کہ ہیکر کا مقصد کسی ایسی خفیہ معلومات تک رسائی ہو جس کے ذریعے وہ لوگوں کو دھمکا سکے۔ یہ بھی ممکن ہے کہ ہیکر کسی اورکا ا کاؤنٹ استعمال کرے یعنی کسی اور شخص کا نام اور تصاویر استعمال کرکے اپنے ناپاک عزائم کو پورا کرنا چاہے۔
مزید دھچکا لگنے والی بات یہ ہے کہ حالیہ ہیکنگ کی زد میں صرف صارفین کا فیس بک اکاؤنٹ ہی نہیں بلکہ دوسری زیرِ استعمال سوشل میڈیا سروسز جیسا کہ انسٹا گرام، سپوٹی فائے، ٹینڈر اور ائیر بینبی بھی آئے ہیں۔
اس ہیکنگ کے نتیجہ میں لا تعداد لوگوں کے پرسنل ڈیٹا کو خطرہ لاحق ہو گیا کیوں کہ ہیکنگ کی وجہ سے صارفین کے اکاؤنٹس غیر محفوظ ہو گئے ہیں۔ یہ بھی عین ممکن ہے کہ اس ہیکنگ کے نتیجہ میں بہت سے اداروں کو اپنے آڈٹ کے نظام میں از سرِ نو تبدیلیاں کرنا پڑ جائیں۔ فیس بک کے ذریعے آپ اگر کسی اور سوشل سروس میں لوگ ان کرتے ہیں تو وہ بھی اس ہیکنگ کے اثر سے محفوظ نہیں رہ سکی۔
یہ بلا شبہ بہت ہی توجہ طلب مسئلہ ہے اور بہت سے لوگوں کے لئے کافی پریشان کن بات بھی ہے کیوں کہ فیس بک اب کئی طرح کے کاموں کے لئے استعمال کیا جانے والا آن لائن پلیٹ فارم بن چکا ہے۔ اس نے لوگوں کی روزمرہ کی زندگی میں اپنا ایک اہم مقام بنالیا ہے جس کے سبب عالمی سطح پر ایک بہت بڑی تعداد میں لوگ اس کا استعمال کرتے ہیں۔ فیس بک نے لوگوں کو جہاں تفریح دی ہے وہیں دور دراز فاصلوں کو کم بھی کیا ہے۔ یہ انفرادی و اجتماعی درجہ کا پلیٹ فارم ہے جس کو محفوظ بنانا روز برو زضروری ہو تا جا رہا ہے وگرنہ بے اعتباری اور غیر محفوظ ہونے کے نتیجہ میں لوگ اس سے جلد ہی کنارہ کر لیں گے۔