کرکٹر سے وزیرِ اعظم تک کا سفر:

کرکٹر سے وزیرِ اعظم تک کا سفر:
پاکستا ن تحریک ِ انصاف کے چیئر مین اور سابق مشہور پاکستانی فاسٹ باؤلر عمران احمد خان نیازی جو کہ پاکستان کے موجودہ وزیرِ اعظم کی نشست سنبھالنے جا رہے ہیں 5اکتوبر 1952 کو لاہور میں پیدا ہوئے۔

آپ لاہور کے ایچیسن کالج میں زیرِتعلیم رہے۔ بعد ازاں آپ اعلٰی تعلیم کے حصول کی خاطر انگلینڈ چلے گئے اور وہا ں کے رائل گرامرسکول وورسسٹر میں داخلہ لیا۔ وہاں پر آپ نے تعلیم حاصل کرنے کے ساتھ ساتھ کرکٹ میں بھی بھر پور حصہ لیا ۔ کچھ عرصہ بعد آپ نے کیبل کالج ، آکسفورڈ میں داخلہ لیا اور فلسفہ،

سیاسیات و معاشیات میں گریجوایشن کی۔
عمران خان نے 1971 میں انگلینڈ کے خلاف ٹیسٹ کرکٹ کا آغاز کیا۔ پھر 1974 میں آپ نے ون ڈے انٹر نیشنل میچ کھیلا۔ قومی پاکستانی کرکٹ میں آپ نے 1976 میں بطور کھلاڑی قدم رکھا اور دنیا کے بہترین فاسٹ باؤلروں میں اپنا مقام حاصل کیا۔ کرکٹ کی دنیا میں عمران خان نے 1992 تک شاندار کردار ادا کیا اور 1992 کا ورلڈ کپ اپنے نام کرنے کے بعد ریٹائر ہوئے۔

اسی دوران آپ نے کینسر ہسپتال بنانے کیلئے چندہ جمع کرنا شروع کیا جسکی مدد سے آپ نے 1994 میں لاہور میں شوکت خانم کینسر میموریل ہسپتال کی بنیاد رکھی۔ یہ ہسپتال آپ نے اپنی والدہ کی کینسر سے موت کو مدِ نظر رکھتے ہوئے اور پاکستان میں کینسر کیلئے مناسب علاج نہ ہو نے کی صورت میں قائم کیا۔ جبکہ اسی طرز کا ایک اور کینسر ہسپتال 2015 میں پشاور میں بنایا۔ ان ہسپتالوں میں مریض کا 70 فی صد تک مفت علاج کیا جاتا ہے اور پاکستان میں ایسا کوئی دوسرا ہسپتال ابھی تک وجود میں نہیں آیا جہاں مریضوں کوکینسر کے علاج کیلئے اتنی رعایت دی جاتی ہو۔
کرکٹ کو خیر باد کہنے کے بعد آپ نے 1996 میں سیاست میں شمولیت اختیار کی اورپاکستا ن تحریک ِ انصاف کے نام سے اپنی سیاسی جماعت قائم کی۔آ پ نے 1997 میں پہلی بار الیکشن لڑا لیکن کا میاب نہ ہو سکے۔ اس کے باوجود آ پ نے پاکستان میں بڑھتی ہوئی کرپشن، صحت کیلئے بنیادی سہولیات کی عدم موجودگی ، نا خونداگی، ٹیکس کے رائج الوقت نظام کی بہتری اور تعلیم یافتہ نو جوانوں کیلئے نوکریوں کی کمی کو دور کرنے کے خلاف آواز اٹھائی اور مسلسل جدوجہد کی۔

مسلسل ڈٹے رہنے کے باعث آپ 013 2 کے الیکشن کے نتیجے میں خیبر پختونخوا میں اپنی حکومت بنانے میں کامیاب رہے اور وہاں 5 سال عوام کی بھر پو ر خدمت کی۔ آپ نے اپنی ولولہ انگیز تقریروں کے ذریعے پاکستانی عوام کو ان کے بنیادی حقوق سے متعلق آگا ہ جن کو گذشتہ حکومت پورا کرنے میں بری طرح ناکام رہی۔ جسکے باعث عوام کی ایک بڑی تعداد نے 2018 کےالیکشن میں آپ کے حق میں ووٹ دیے اور آپ کو اپنا موجودہ وزیرِاعظم منتخب کیا۔
عمران خان نے عوام سے پاکستان کو ایک اسلامی فلاحی ریاست بنا نے کا وعدہ کیا ہے اور وہ یقیناً اسے پورا کریں گے کیونکہ کرپشن کے خاتمے کیلئے احتساب کا عمل وہ اپنی ذات سے شروع کرنے پر یقین رکھتے ہیں۔