دوران حمل آئرن کی کمی سے ہونے والا انیمیا اور اس کا علاج

دوران حمل آئرن کی کمی سے ہونے والا انیمیا اور اس کا علاج

عموماً دوران حمل ماں کا جسم بچے کی نشونما کیلئے خون کی اضافی مقدار پیدا کرتا ہےلیکن اگر ماں اپنی خوراک میں آئرن یا دوسرے غذائی اجزاء کی مناسب مقدار نہیں لے رہی ہے تو اس کا جسم سرخ خلیوں کو نہیں بنا سکے گا، جن کی اسے اضافی مقدار میں خون بنانے کیلئے ضرورت ہوتی ہے۔
در اصل دوران حمل ہلکا سا انیمیا ہونا عام سی بات ہے۔لیکن آئرن یا دوسرے غذائی اجزاء کی کمی کی وجہ سے شدید قسم کا بھی انیمیا ہو سکتا ہے جو کہ ماں اور بچے دونوں کیلئے خطرناک بات ہے۔
حاملہ ہونے کے دوران ماں اور اس کے بچے کی نشونما کیلئے ماں کے جسم میں خون کا حجم پچاس فی صد تک بڑھ جاتا ہے جسکی وجہ سے خون میں ہیمو گلوبن کم ہو جاتا ہے۔ اور انسانی جسم کو ہیمو گلوبن بنانے کیلئےآئرن کی ضرورت ہوتی ہے اسی لئے اگر ماں کے جسم میں آئرن مناسب مقدار میں ذخیرہ نہ ہو اور آکسیجن مہیا کرنے والے سرخ خلیوں کے بننے کا عمل سست ہو تو وہ بہت زیادہ تھکاوٹ کا شکار ہو جاتی ہے۔
اس ضمن میں ضروری ہے کہ مریضوں کو انیمیا کا باعث بننے والے عوامل سے آگاہ کیا جائے مزید یہ کہ انیمیا کا ماں اور اسکے بچےکی صحت کو ہونے والے نقصان دہ اثراتسے آگاہ کرنا بھی ضروری ہے۔ساتھ ہی ساتھ مریض اور اسکے گھر والوں کو دوران حمل آئرن کی کمی سے ہونے والے انیمیا کے علاج کیلئے مناسب ‏غذاؤں کے استعمال سے آگاہ بھی کرنا چاہیئے۔
بہت سی صورتوں میں حمل سے پہلے اور بعد میں غذا میں مناسب مقدار میںآئرن کے شامل نہ ہونے سے بھی انیمیا ہوتا ہے۔ بہت کم صورتوں میں یہ وٹامن بی بارہ کی کمی ، خون کے ضیاع اور مدافعتی خرابی کی وجہ سےیا گردوں کی بیماری کی وجہ سے ہوتا ہے-
دوران حمل آئرن کی کمی سے ہونے والے انیمیا کی عام علامات میں جلد، ہونٹ اور ناخن کی پیلاہٹ، کمزور ی اور تھکاوٹ محسوس کرنا، غنودگی، سانس میں کمی واقع ہونا، دل کی دھڑکن میں تیزی نیز کسی بھی چیز پر غور کرنے کی صلاحیت میں مشکل ہونا شامل ہیں۔
غذا سے اس مسئلے کا علاج حتٰی کہ شفا بھی ممکن ہے۔ اس کیلئے مریض کو چاہیئے کہ خوراک میں مناسب آئرن لینے کو یقینی بنائے۔متوازن غذا کھائے او ر اپنی غذا میں آئرن سے بھر پور غذائیں شامل کرے جیساکہ کم چربی والا گوشت، مرغی، مچھلی،ہری اور گہرے پتوں والی سبزیاں، آئرن سے بھر پور اناج اور دالیں، پھلیاں،خشک میوہ جات اور بیج، انڈے وغیرہ۔
مزید براں وٹامن سی سے بھر پور عذائیں آئرن کو جسم میں جذب کرنے میں مدد دیتی ہیں۔ لہٰذا مریض کو ترش پھل اور انکا جوس، سٹرابیری، کیوی ،ٹماٹر اور گھنٹی مرچ کو بھی اپنی غذا کا حصہ بنانا چاہیئے۔
‎ وٹامن بی نائن یا فولیٹ کی کمی سے بچنے کیلئے بھی فولیٹ سے بھر پور غذاؤں کا استعمال کرنا ضروری ورنہ انیمیا ہوسکتاہے۔ ان میں ترش پھل اور ہری اور گہرے پتوں والی سبزیاں، روٹی اوراضافی فولیٹ سے بھر پور اناج اور خشک پھلیاں شامل ہیں-